مبینہ ماسک نہ پہننے کی پاداش میں گرفتار چار مسلم نوجوانوں کی ضمانت منظور اورنگ آباد ہائیکورٹ نے ضمانت منطور کی، جمعیۃ علماء نے قانونی امداد فراہم کی

مبینہ ماسک نہ پہننے کی پاداش میں گرفتار چار مسلم نوجوانوں کی ضمانت منظور
اورنگ آباد ہائیکورٹ نے ضمانت منطور کی، جمعیۃ علماء نے قانونی امداد فراہم کی
اورنگ آباد 30 جون
مبینہ ماسک نہ پہننے کی پاداش میں گرفتار چار مسلم نوجوانوں کو گذشتہ کل ممبئی ہائیکو رٹ کی اورنگ آباد بینچ نے مشروط ضمانت پر رہا کیئے جانے کے احکامات جاری کیئے۔
کرونا وبا سے ہندوستان سمیت پوری دنیا دوچار ہے ایسے میں مہاراشٹر کے ثقافتی شہر اورنگ آباد میں گذشتہ ماہ پولس اور چار مسلم نوجوانوں میں اس وقت مبینہ تکرار ہوگئی جب پولس نے انہیں ماسک نہ پہننے کی وجہ سے شدید زدو کوب کیا اور اس کے بعد ان پر تعزیرات ہند کی دفعات 143,149,188,332,333,353,594,507، موٹر وہیکل قانون کی دفعہ 184,128 اور ممبئی پولس ایکٹ کی دفعہ 135 کے تحت مقدمہ قائم کیا تھا۔ملزمین شیخ فاروق شیخ قادر، شیخ سمیر شیخ کلیم، شیخ شازیب شیخ فاروق اور شیخ شاہ رخ شیخ فاروق کو گذشتہ کل ممبئی ہائی کورٹ کی اورنگ آباد بینچ نے پندرہ ہزارروپئے کے ذاتی مچلکہ سمیت مشروط ضمانت پر رہا کرنے کے احکامات جاری کیئے۔
ملزمین کو جمعیۃ علماء مہاراشٹر (ارشد مدنی) قانونی امداد کمیٹی کے سربراہ گلزار اعظمی کی ہدایت پر قانونی امداد دفراہم کی گئی، ملزمین کی گرفتاری کے بعد سے ہی اورنگ آباد شہر جمعیۃ علماء صدر حافظ عبدالعظیم اور لیگل سیل صدر مصطفی خان،ایڈوکیٹ شیخ توفیق، ایڈوکیٹ ذکی اور دیگر مقدمہ کی پیروی کررہے تھے۔
ملزمین کی ضمانت عرضداشت پر بحث کرتے ہوئے دفاعی وکیل این ایس گھانیکر نے جسٹس وی کے جادھو کو بتایا کہ اس معاملے میں حالانکہ سیشن عدالت نے ملزمین کی ضمانت عرضداشت خارج کردی ہے لیکن اب جبکہ ملزمین کے خلاف چار ج شیٹ داخل کی جاچکی ہے ملزمین کو ضمانت پر رہا کردینا چاہئے۔حالانکہ سرکاری وکیل پی این کٹی نے ملزمین کی ضمانت پر رہائی کی سخت لفظوں میں مخالفت کی لیکن جسٹس وی کے جادھو نے دفاعی وکیل کے دلائل سے اتفاق کرتے ہوئے ملزمین کو ضمانت پر رہا کیئے جانے کے احکامات جاری کیئے۔
جسٹس وی کے جادھو نے اپنے فیصلہ میں لکھا کہ چارج شیٹ داخل ہوجانے کے بعد ملزمین کو ضمانت پررہا کیا جانا چاہئے کیونکہ ملزمین ماضی میں کسی بھی طرح کی غیر قانونی سرگرمیوں میں ملوث نہیں تھے۔
ملزمین کی جیل سے رہائی کے بعد آج انہوں نے جمعیۃ علماء اورنگ آباد آفس پہنچ کر انہیں قانونی امداد دینے کے لیئے جمعیۃ علماء کا شکریہ ادا کیا ۔