مدھوبنی کاکٹھیلا گاوں بھی بن گیا شاہین باغ۔ غیرمعینہ مدت کیلئے احتجاج جاری۔ مظاہرے میں خواتین کی تعداد میں روز بروز اضافہ ہوتا جارہا ہے

مدھوبنی کاکٹھیلا گاوں بھی بن گیا شاہین باغ۔
غیرمعینہ مدت کیلئے احتجاج جاری۔
مظاہرے میں خواتین کی تعداد میں روز بروز اضافہ ہوتا جارہا ہے

ملت ٹائمز۔ عامرظفر قاسمی۔مدھوبنی

ریاست بہار کے مدھوبنی ضلع کے کٹھیلا گاوں میں 21جنوری 2020بروزمنگل سے این آرسی۔این پی آر۔اور سی اے اے کے خلاف مردوخواتین کاغیر معینہ مدت کے لئے پرامن احتجاج جاری ہے
احتجاج میں شامل ۔گڑھیا۔بھیروا۔دملہ۔پرسونی۔عشورہ۔شیبول۔تیسی۔درجولیا۔بلہا۔پروہی۔پتونا۔ہمارے رفیق انتظار احمد کٹھیلا نے بتایا کہ گڑھیا اور بھیروا کی خواتین ومرد۔بوڑھے بچے بچیاں پیش پیش ہیں۔
آج مظاہرہ کاپانچواں دن ہے ان سب کایہ کہنا ہے کہ یہ احتجاج اس وقت تک جاری رہے گا جب تک کہ اس کالے قانون کوواپس نہ لے لیاجائے
خواتین ۔طلبہ وطالبات۔بوڑھے اپنے ہاتھوں میں ترنگا جھنڈا۔بھیم راو امبیڈکر کی تصویر لگی تختیاں لئے اور اپنی پیشانی پر NO NRC.NO NPR.NO C AA کی لکھی پٹی لیکر دھرنا گاہ پہنچے
اور وقفے وقفے سے اس کالے قانون کے خلاف لگائے جارہے نعرے
ہندو مسلم سکھ عیسائی
سب آپس میں بھائی بھائی
ہم لیکر رہینگے آزادی
ہے جان سے پیاری آزادی
انقلاب زندہ باد
ہندوستان زندہ باد
کے نعروں سے کٹھیلا کاشاہین باغ گونجتا رہا
دھرنے میں شامل خواتین حضرات نے بتایا کہ
ہم نے بہت ساری تحریکیں دیکھیں لیکن کسی تحریک میں خواتین کی اتنی بڑی تعداد نہیں دیکھی
ممبران کمیٹی
1 ناصر حسین کٹھیلا
2 محمد سلمان
3 انتظار احمد کٹھیلا
4 گڈو قریشی
5 محمد گڈو
ارشاد احمد صاحب گڑھیا
عمران صاحب گڑھیا
نوشی صاحب گڑھیا
چاند عثمانی اپ پرمکھ
کفیل احمد بھیروا
محمد فخر عالم بھیروا
محمد اکرم
تبریز بھیروا
بدیع الزماں صاحب دملہ
محمد امتیاز دملہ
محمد حیدر دملہ
عزیز الحق دملہ
داکٹر عالم صاحب عشورہ
بیچن یادو، جن ادھیکار پارٹی
جمن قریشی کٹھیلا ۔ممتاز قریشی کٹھیلا کے نام قابل ذکر ہیں
مظاہرے میں خواتین ومرد حضرات نے بتایا کہ ہم آئین کے تحفظ کے لئے آخری سانس تک لڑتے رہینگے